اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) کشمیری اخبار “اونلی کشمیر” کی نیوز رپورٹ کے مطابق نئی دہلی میں قائم پاکستانی سفارتخانے میں حریت کانفرنس جموں کشمیر کے راہنما میر واعظ عمر فاروق نے   پاکستانی ہائی کمیشنر عبد الباسط سے خصوصی ملاقات کی۔ اس موقع پر حریت راہنما نے پاکستان کی جانب سے تنازعہ کشمیر کے اہم فریق خطہ گلگت بلتستان کے پاکستان کے ساتھ باضابطہ آئینی الحاق اور اسے پاکستان کا پانچواں آئینی صوبہ قرار دینے کی اطلاعات پر اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تنازعہ کشمیر کے حل تک خطہ گلگت بلتستان کے پاکستان سے الحاق کی صورت میں کشمیر کاز کو نا قابل تلافی نقصان پہنچ سکتا ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ گلگت بلتستان تاریخی لحاظ سے اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں تنازعہ کشمیر کا حصہ اور متنازعہ خطہ ہے اور اسے آئینی صوبہ بنا کر پاکستان مسئلہ کشمیر پر اپنے 68 سالہ موقف سے روگردانی بھلہ کیسے کر سکتا ہے؟ اس موقع پر پاکستانی ہائی کمشنر عبد الباسط کا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان کو آئینی صوبہ بنانے کے حوالے سے حکومت پاکستان کا کوئی ارادہ نہیں، کشمیر کاز کو نقصان پہنچائے بغیر ہی گلگت بلتستان کے عوام کو بااختیار بنانے کے سلسلے میں ایک خصوصی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔ انکا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان کو پانچواں آئینی صوبہ بنانا تنازعہ کشمیر کے حل تک ناممکن ہے اوروضاحت کی کہ ریاست پاکستان کے پاس  ایسی کسی قسم کی تجویز قابل غور نہیں ہے۔

Mirwaiz-400x197

http://apnagilgit.com/wp-content/uploads/2016/02/Mirwaiz-400x197.jpghttp://apnagilgit.com/wp-content/uploads/2016/02/Mirwaiz-400x197-300x300.jpgAdmin ApnaGilgitLocal NewsNews
 اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) کشمیری اخبار 'اونلی کشمیر' کی نیوز رپورٹ کے مطابق نئی دہلی میں قائم پاکستانی سفارتخانے میں حریت کانفرنس جموں کشمیر کے راہنما میر واعظ عمر فاروق نے   پاکستانی ہائی کمیشنر عبد الباسط سے خصوصی ملاقات کی۔ اس موقع پر حریت راہنما نے پاکستان کی...